اسامہ بن لادن کے بیٹے بارے امریکی انکشاف
واشنگٹن(ویب ڈیسک) امریکا نے عالمی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے بانی رہنما اسامہ بن لادن کے بیٹے اور وارث حمزہ بن لادن کا نام دہشتگردوں کی بلیک لسٹ میں شامل کردیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ نے حمزہ بن لادن کا نام عالمی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کرنے کا حکم دیا جس کا مطلب کوئی بھی امریکی شہری حمزہ سے کسی طرح کا کوئی رابطہ نہیں کرسکے گا، جبکہ امریکا میں اگر ان کے اثاثے موجود ہیں تو وہ بھی منجمد کر لیے جائیں گے۔اسامہ بن لادن کے ٹھکانے پر کارروائی میں امریکی نیوی سیل کو ملنے والے خطوط میں حمزہ نے اپنے والد سے ان کے نقش قدم پر چلنے کے لیے ٹریننگ کی درخواوست کی تھی۔ان خطوط کی جانچ پڑتال کرنے والے سی آئی اے کے تجزیہ کار نے 2009 میںبتایا تھا کہ حمزہ نے جس وقت ایبٹ آباد میں چھپ کر رہنے والے اپنے والد کو خط لکھا، تب دونوں نے ایک دوسرے کو 8 سال سے نہیں دیکھا تھا تاہم اسامہ بن لادن اس وقت ایران میں نظر بند اپنے بیٹے کو القاعدہ کا سربراہ بننے کی تربیت فراہم کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے۔اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد ان کے مصری نائب ایمن الظواہری نے تنظیم کی باگ دوڑ سنبھالی تاہم حمزہ نے اپنے حامیوں کے لیے آڈیو پیغام جاری کیا۔جولائی 2016 میں سامنے آنے والے آڈیو پیغام میں حمزہ بن لادن نے، ان کے والد کو قتل کرنے پر امریکا سے بدلہ لینے کی دھمکی دی تھی۔ہم سب اسامہ ہیں کے عنوان سے جاری ہونے والے 21 منٹ کے اس آڈیو پیغام میں حمزہ نے امریکا اور اس کے اتحادیوں کے خلاف عالمی تنظیم کی کارروائیاں جاری رکھنے کا وعدہ کیا تھا۔

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا